Urdu Ghazal



urdu ghazal


آہ کو چاہیے _____ اِک عُمر اثر ھونے تک

کون جیتا ھے تیری زُلف کے سر ھونے تک


دامِ ہر موج میں ھے ____ حلقہ صد کامِ نہنگ

دیکھیں کیا گُزرے ھے قطرے پہ گُہر ھونے تک


عاشقی صبر طلب  ___ اور تمنا بے_ تاب

دل کا کیا رنگ کروں خونِ جگر ھونے تک


ھم نے مانا کہ تغافل نہ کرو گے ______لیکن

خاک ھو جائیں گے، ھم تم کو خبر ھونے تک

پرتوِ  ​خُور  سے ھے  شبنم کو  فنا  کی  تعلیم

میں بھی ھوں ایک عنایت کی نظر ھونے تک


یک نظر بیش نہیں فُرصتِ ہستی غافل

گرمیِ بزم ھے،  اِک رقصِ شرر ھونے تک


غمِ ہستی کا اسد کس سے ھو جُز مرگ علاج

شمع ھر رنگ میں جلتی ھے _ سحر ھونے تک



Post a Comment

Previous Post Next Post